136

اداکار امان اللہ مرحوم کی میت کو لاہور کی ایک بڑی ہاﺅسنگ سوسائٹی کیوں دفن ہونے سے روکا

کنگ آف کامیڈی امان اللہ خان گزشتہ دنوں طویل علالت کے بعد لاہور کے ایک نجی ہسپتال میں انتقال کر گئے تھے۔وہ برکی روڈ پر واقع ”پیراگون سٹی“ میں رہائش پذیرتھے۔ ان کے ورثاءان کی نماز جنازہ اور تدفین کیلئے انتظامیہ پیراگون سٹی کے پاس پہنچے تو انہو ںنے نہ صرف امان اللہ خاں کی نماز جنازہ اپنی جامع مسجد میں ادا کرنے سے روک دیا بلکہ صد افسوس کہ قبرستان تک میں جگہ دینے سے صاف انکار کردیا۔ جس کی وجہ سے ورثاءانتہائی پریشانی سے دوچار ہوئے۔ تین سے چار گھنٹے کے تنازع کے بعد قبر کی جگہ اس وقت دی گئی جب وزیر اطلاعات فیض الحسن چوہان موقع پر پہنچ گئے اور انہوں نے اپنے اختیارات بروئے کار لاتے ہوئے فی الفور قبر کی کھدائی کا عمل شروع کروایا۔ ازاں بعد جب گورنر پنجاب چودھری محمد سرور اور دیگر معروف شخصیات جنازہ میں شرکت کیلئے پہنچیں تو انتظامیہ نے پھر اعتراضات شروع کردیئے۔ ذرائع کے مطابق پیراگون سٹی انتظامیہ کا کہنا تھا کہ امان اللہ ایک مراثی تھا اور مراثیوں کیلئے ہمارے قبرستان میں کوئی جگہ نہیں۔بعد ازاں اسی قبرستان میں اداکار امان اللہ کا جسد خاکی لحد میں اتار دیا گیا۔یاد رہے کہ امان اللہ پیراگون سٹی کے R بلاک میں رہائش پذیر تھے۔ قابل ذکر پہلو یہ ہے کہ جب امان اللہ اس سوسائٹی میں کروڑوں کا پلاٹ لینے گئے تو تب انہیں اس بارے میں کوئی علم نہ تھا کہ یا اس وقت وہ محض پیسے بٹورنے کیلئے چپ سادھے رہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں