120

ایف آئی اے کا مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کے دفتر پر چھاپہ، 2ملازم گرفتار

ایف آئی اے کراچی نے حوالہ ہنڈی کے الزام میں مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کے دفتر پر چھاپہ مار کر فلموں اور سینما آلات کی درآمد کا تمام ریکارڈ قبضے میں لے لیا جبکہ کمپنی مینیجر شبیر حسین سمیت 2افراد کو حراست میں لے لیا۔
ایف آئی اے کراچی نے حوالہ اورہنڈی کے خلاف جاری کریک ڈاؤن کے دوران کچھ دن قبل شکیل جعفرانی نامی ہنڈی ایجنٹ کو گرفتار کرکے اس کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزام میں مقدمہ درج کیا تھا، دوران تفتیش شکیل جعفرانی نے سندھ کی اہم شخصیات اور کاروباری گروپوں کیلیے حوالہ اورہنڈی کے ذریعے زرمبادلہ بیرون ملک منتقل کرنے کا اعتراف کیا، شکیل جعفرانی کی جانب سے فراہم کردہ معلومات کے مطابق مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کی جانب سے بھی صرف ایک سال کے دوران تقریباً 15 کروڑ روپے ہنڈی کے ذریعے بیرون ملک منتقل کیے گئے ایف آئی اے نے اس سلسلے میں جب تحقیقات کا دائرہ وسیع کیا تو انکشاف ہوا کہ مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کے مالک ندیم مانڈوی والا اور ان کے صاحبزادے عادل مانڈوی والا فلموں اور سینما آلات کی درآمد کے کاروبار سے وابستہ ہیں اور درآمدی ڈیوٹی بچانے کیلیے درآمد شدہ سامان کو اصل قیمت سے کہیں کم قیمت ظاہر کرتے ہیں جسے قانونی اصطلاح میں انڈر انوائسنگ کہا جاتا ہے اور درآمد شدہ سامان کی رقم پوری کرنے کیلیے حوالہ اور ہنڈی کے ذریعے باقی رقم بیرون ملک بھیجنے میں ملوث ہیں۔
ایف آئی اے حکام نے تمام شواہد کی روشنی میں جمعے کی شام سرور شہید روڈ پر واقع شاپنگ مال میں قائم مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کے دفتر پر چھاپہ مارا اور تمام ریکارڈ قبضے میں لے لیا۔ ایف آئی اے حکام رات گئے تک شبیر حسین سے تفتیش کررہے تھے تاہم مقدمہ درج کرنے کا فیصلہ نہیں کیا جاسکا۔علاوہ ازیں ترجمان مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ کے مطابق ایف آئی اے نے مانڈوی والا انٹرٹینمینٹ کمپنی کے دفتر چھاپہ مارا اورا یک ملازم کو پوچھ گچھ کے لیے تحویل میں لینے کے بعد چھوڑ دیا ۔ چھاپے میں دفترسے اہم دستاویزات بھی قبضے میں لی گئی ہیں ، مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ ایف آئی اے کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں جبکہ مانڈوی والا انٹرٹینمنٹ قانون کی پاسداری کرنے والا ادارہ ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں