69

تھانہ شاہدرہ لاہور میں زیر حراست شہری کی ہلاکت پر پولیس اہلکاروں کیخلاف قتل کا مقدمہ

حراست میں شہری کی ہلاکت پر تین پولیس اہلکاروں سمیت پانچ افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا۔
لاہور تھانہ شاہدرہ میں زیر حراست شہری کی ہلاکت پر تین پولیس اہلکاروں سمیت پانچ افراد کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے، مقدمے میں انچارج انویسٹی گیشن شاہدرہ غلام باری، چوکی انچارج سگیاں سرور اور فیکٹری مالک حفیظ چٹھہ کو نامزد کیا گیا ہے۔
سی سی پی او لاہور محمد عمر شیخ نے شہری کی ہلاکت پر نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی انوسٹی گیشن کی سربراہی میں انکوائری ٹیم تشکیل دے دی ہے اور انکوائری کمیٹی کو جلد از جلد رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی گئی ہے۔
عمر شیخ کا کہنا تھا کہ پولیس کی طرف سے پوسٹ مارٹم کروانے کی بھی درخواست کر دی گئی، پوسٹ مارٹم رپورٹ کی روشنی میں مزید کارروائی کا فیصلہ کیا جائے گا، واقعےکا جو بھی ذمہ دار ہوگا اس کےخلاف قانون کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔
ایف آئی آر کے مطابق مقتول ایک فیکٹری میں ملازمت کرتا تھا جہاں اسے چوری کے شبہ میں مالکان نے اس پر شدید تشدد کے بعد پولیس کے حوالے کردیا۔ پولیس کی حراست میں بھی مقتول کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں