232

دنیا کا سب سے بڑا طیارہ: پاکستان میں بھی

دنیا کے سب سے بڑے مسافر بردار جہاز ایئر بس اے 380 کا آپریشن پاکستان میں شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا ہے، سول ایوی ایشن اتھارٹی نے طیارے کی فلائٹ سروس کی سیفٹی اسسمنٹ کے لیے 6 رکنی کمیٹی تشکیل دے دی۔
تفصیلات کے مطابق دنیا کے سب سے بڑے مسافر بردار جہاز ایئر بس اے 380 کا آپریشن پاکستان میں شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا گیا اور سول ایوی ایشن اتھارٹی نے طیارے کی فلائٹ سروس کی سیفٹی اسسمنٹ کے لیے 6 رکنی کمیٹی بھی تشکیل دے دی ہے۔ کمیٹی اعظم غوری جوائنٹ ڈائریکٹر اے ٹی ایس، فیصل صفدر جوائنٹ ڈائریکٹر ایس کیو ایم ایس، انجینئر فیض اختر جوائنٹ ڈائریکٹر اے پی ایس، انجینئر عرفان خان ڈویژنل سول انجینئر، انجینئر وسیم احمد جوائنٹ ڈائریکٹر الیکٹریکل اور عرفان ابان اسسٹنٹ ڈائریکٹر ایئرڈروم آپریشنز پر مشتمل ہوگی۔
فیصل صفدر خان کو اے 380 کے فلائٹ آپریشن سیفٹی اسسمنٹ ٹیسٹ کا کوآرڈی نیٹر مقرر کیا گیا ہے، جو سیفٹی اسسمنٹ کے لیے وقت اور مقام کا تعین کرے گا۔ کمیٹی کوآرڈی نیٹر تمام ممبران کے دستخطوں کے ساتھ سیفٹی اسسمنٹ رپورٹ انتظامیہ کو بھجوائے گا۔ 8 جولائی کو ایئر بس اے 380 اسلام آباد انٹرنیشنل ایئر پورٹ پر آزمائشی طور پر لینڈنگ اور ٹیک آف کر چکا ہے۔ اے 380 طیارے میں 600 سے زائد مسافروں کے بیٹھنے کی گنجائش موجود ہے اور یہ ڈبل ڈیک ایئر بس ہے جس کی باڈی بے حد چوڑی ہے۔
یہ فور انجن جیٹ ایئر لائنر یورپی مینوفیکچرر ‘ایئر بس’ نے بنایا ہے، اس طیارے کے پروں کا پھیلاؤ ایک فٹ بال گراؤنڈ جتنا ہے جب کہ اس کی لمبائی دو بلیو وہیل مچھلیوں جتنی ہے ۔چار انجنوں پر مشتمل دنیا کا سب سے بڑا مسافر بردار طیارہ 950 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے اُڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں