245

شہباز شریف کی درخواست ضمانت مسترد ہونے کے خلاف نظرثانی کی اپیل دائر

مسلم لیگ (ن) کے صدر شہباز شریف کی درخواست ضمانت مسترد ہونے کے خلاف ہائی کورٹ میں نظر ثانی کی اپیل دائر کردی گئی ہے۔
اے کے ڈوگر ایڈووکیٹ کی جانب سے لاہور ہائی کورٹ میں دائر کردہ نظرثانی اپیل میں وفاقی حکومت، نیب اور شہباز شریف کو فریق بنایا گیا ہے۔
درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ شہباز شریف پر آشیانہ ہاؤسنگ کیس میں لطیف سننز کمپنی کا ٹھیکہ منسوخ کرکے خواجہ سعد رفیق کی کاسا کنسٹرکشن کمپنی کو دینے کا الزام ہے، شہباز شریف کو انکوائری مکمل ہونے اور جرم ثابت ہونے سے قبل گرفتار کیا گیا حالانکہ ایسا کرنا آئین کے آرٹیکل 10 کی خلاف ورزی ہے، چیئرمین نیب کا دوران انکوائری کسی بھی ملزم کو گرفتار کرنے کا اختیار آئین سے متصادم ہے۔
درخواست گزار کا موقف ہے کہ شہباز شریف کو کیس میں آزاد اور منصفانہ ٹرائل کا حق نہیں دیا گیا، لاہور ہائی کورٹ نے غیر قانونی طور پر شہباز شریف کی درخواست ضمانت مسترد کی، عدالت سے استدعا ہے کہ شہباز شریف کی گرفتاری کالعدم قرار دی جائے اور ان کی ضمانت منظور کر کے رہائی کا حکم دے۔
واضح رہے کہ سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کو نیب نے 5 اکتوبر کو حراست میں لیا تھا۔ لاہور ہائی کورٹ نے 24 اکتوبر کو آشیانہ ہاؤسنگ اسکینڈل میں ان کی درخواست ضمانت مسترد کردی تھی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں