323

ڈریم لینڈ سوسائٹی لاہور کی منظوری کے حوالے سے حیران کن انکشافات

ڈریم لینڈ ہاﺅسنگ سوسائٹی کو فائدہ پہنچانے کیلئے ایل ڈی اے افسروں نے سرکاری اراضی پر خود قبضہ کروایا۔ ڈائریکٹر میٹرو پولیٹن پلاننگ ون مزمل اشتیاق کے دستخط سے غیر قانونی پلاننگ پرمیشن جاری ہوا۔ لاہور ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے دستاویزات کے مطابق ڈریم لینڈ سوسائٹی کی 154 کنال 13 مرلہ اراضی کا این او سی 6جون کو مانگا گیا۔ سی ایم پی ونگ کے چند افسروں نے تحریری طور پر پلاننگ پرمیشن دینے پر انکار کیا تو ڈائریکٹر مزمل اشتیاق نے میرٹ کی بجائے افسروں کے خلاف کارروائی کا لکھ دیا جس کے باعث چار ماہ تک ڈریم لینڈ سوسائٹی کا کیس غیر قانونی اقدامات پر رکا رہا۔ سوسائٹی کے ڈویلپرز کے بھائی ایم پی اے نذیر چوہان ڈی جی ایل ڈی اے سے ون آن ون بھی ملے۔ 13ستمبر کو اچانک فائل ڈی جی ایل ڈی اے کو گھر بھجوائی گئی۔ جنہوں نے اس کی منظوری دیدی۔ ذائع کا کہنا ہے کہ ایف آئی اے کی جانب سے ڈریم لینڈ ہاﺅسنگ سکیم کے کیس کا فرانزک آڈٹ بھی کیا جائے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں