368

ہمایوں اختر خان کو لوٹا کیوں کہا جاتا ہے؟

حلقہ131سے جہاں25جولائی کو عمران خان سے صرف680ووٹوں سے ہارنے والے خواجہ سعد رفیق کا مقابلہ اب جنرل اختر عبدالرحمن کے صاحبزادے ہمایوں اختر سے ہے۔ اعجاز الحق کی طرح ہمایوں نے بھی نوازشریف کی رفاقت سے اپنی سیاست کا آغاز کیاتھا اور اسی مسلم لیگ کے ٹکٹ پر الیکشن لڑتے اور جیتتے رہے۔ 12اکتوبر 1999ئ کے بعد جنرل مشرف کی اطاعت قبول کرلی۔ اکتوبر2002ئ کا الیکشن قاف لیگ کے ٹکٹ پر لڑا۔ ن لیگ کی طرف سے سابق سیکرٹری خارجہ اکرم ذکی امید وار تھے‘ جو رات کو جیت چکے تھے۔ اگلی صبح ان کی ناکامی کا اعلان لائی۔ 2008ء کے الیکشن میں ہمایوںقاف لیگ کے ٹکٹ پر اپنی ضمانت بھی نہ بچا سکے۔2013ء میں وہ مسلم لیگ (ن) کا انتخابی منشور تیار کرنے والی کمیٹی کے رکن تھے‘ لیکن ٹکٹ سے محروم رہے ‘البتہ ان کے چھوٹے بھائی ہارون اختر سینیٹر بن کر نوازشریف حکومت کے اقتصادی امور کے مشیر ہوگئے۔ ہمایوں نے نون لیگ کے ٹکٹ سے مایوس ہو کر الیکشن سے تین ہفتے قبل پی ٹی آئی میں شمولیت اختیار کرلی۔ کہا جاتا ہے کہ عمران خان نے ان سے حلقہ 131کے ضمنی انتخاب میں ٹکٹ کا وعدہ کرلیا تھا(جہا ں وہ خواجہ سعد رفیق کے مدمقابل تھے)

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں